انسانی دماغ پڑھنے والی مشین ایجاد؟ سائنسی تاریخ کی سب سے بڑی ایجاد

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) جھوٹ پکڑنے والی مشین پہلے سے مارکیٹ میں موجود ہے لیکن ماہرین اسے اتنا قابل بھروسہ نہیں سمجھتے۔ اب یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کے سائنسدانوں نے ایک ایسی مشین ایجاد کر لی ہے جو ایسے طریقے سے انسانوں کے جھوٹ پکڑا کرے گی کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ مشین انسان کے خیالات کو پڑھنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ اسے کسی بھی شخص کے سر پر لگایا جائے گا اور یہ اس کے ذہن میں چل رہے خیالات کو پڑھ کر اسے تحریر کی شکل میں سکرین پر ظاہر کر دے گی۔ تجربات میں اس مشین نے حیران کن طور پر 90فیصد درستگی دکھائی ہے جو انسانی دماغ پڑھنے والی سابق مشینوں کی نسبت کہیں زیادہ ہے۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”انسان اپنے دماغ میں جب کوئی فقرہ بناتا ہے تو اس میں Vowelsاور Consonantsکا ایک آمیزہ استعمال کرتا ہے۔ یہ مشین عصبی سگنلز کے ذریعے اسی آمیزے کا سراغ لگاکر اس کا تجزیہ کرتی اور اس فقرے کو تحریر کے قالب میں ڈھالتی ہے۔“ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈیوڈ موسس کا کہنا ہے کہ ”یہ مشین ایسے الفاظ بھی استعمال کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے جو اس کے سسٹم میں موجود ہی نہیں۔آج تک کوئی ایسی مشین ایجاد نہیں ہو سکی جو انسانی دماغ کے خیالات کو ’رئیل ٹائم‘ میں افشاءکر سکے۔ یہ پہلی مشین ہے کہ انسان جو سوچ رہا ہو گا یہ اسی وقت اس کا دماغ پڑھ کر سکرین پر دکھاتی جائے گی۔یہ ایجاد ایسے مریضوں کی صورتحال جاننے کے لیے انتہائی مفید ثابت ہو گئی جو بولنے یا حرکت کرنے کی صلاحیت کھوچکے ہوں۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں