مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی 17 کشمیری شہید 100 زخمی

سری نگر: مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی سفاکانہ ریاستی دہشت گردی کے نتیجے میں 17 کشمیریوں کی شہادت اور 100 سے زائد کے زخمی ہونے کے بعد حریت قیادت کی کال پر وادی میں آج بھی مکمل ہڑتال ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی فورسز نے مقبوضہ کشمیر کے ضلع اننت ناگ اور شوپیاں میں بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے سرچ آپریشن کی آڑ میں 17 کشمیریوں کو شہید کردیا تھا۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز نے 4 کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا

جبکہ احتجاج کے لیے باہر نکلنے والوں پر گولیاں اور پیلٹ گن سے فائر کیے گئے، جس کے نتیجے میں 100 سے زائد کشمیری زخمی ہوگئے۔

نوجوانوں کی میتیں گھروں کو پہنچنے پر غم و غصے کی لہر دوڑ گئی، جنوبی حصے سے شروع ہونے والا احتجاج کا سلسلہ پوری وادی میں پھیل گیا اور احتجاج میں شریک ہونے کے لیے مسجدوں کے لاؤڈ اسپیکرز سے باقاعدہ اعلانات کیے گئے۔

تاہم بھارتی فوج نے سرچ آپریشن پر ہی اکتفا نہیں کیا بلکہ جنازوں میں شریک نہتے افراد پر اندھا دھند گولیاں اور پیلٹ گن سے فائر کیے گئے، جس کے نتیجے میں 100 سے زائد کشمیری زخمی ہوگئے۔

کشمیری نوجوانوں کے قتل پر حریت قیادت نے 2 روزہ ہڑتال کا اعلان کیا تھا۔

علاوہ ازیں ضلع شوپیاں میں انٹرنیٹ سروس بھی بند کردی گئی ہے۔

کشمیری میڈیا کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں آج اسکول اور کالج بھی بند ہیں جبکہ امتحانات ملتوی کردیئے گئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں