نوازشریف نے آخری تنخواہ 11 اگست 2013 کو وصول کی، واجد ضیاٰٰ

اسلام آباد: احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کے دوران جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیا نے نوازشریف کی کیپٹل ایف زیڈ ای سے تنخواہ وصول کرنے کی تصدیق کردی۔
تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کی، دوران سماعت جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیا نے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف نے کیپٹل ایف زیڈای سے تنخواہ وصول کی ، ان کا کہناتھا کہ نوازشریف نے آخری تنخواہ11 اگست 2013 کو وصول کی ،وصول کی گئی تنخواہ جولائی کے مہینے کی تھی ۔
جے آئی ٹی سربراہ نے کہا کہ میں دستاویزات کے متن پر بات نہیں کروں گا،کیپٹل ایف زیڈ ای میں نوازشریف کی ملازمت سے متعلق سکرین شاٹ میں ملازمت کی تاریخ درج ہے۔
واجد ضیا نے عدالت کو بتایا کہ ہم جافزا فرم پر انحصارکر رہے ہیں ،اس کے مطابق نوازشریف نے تنخواہ لی ،جے آئی ٹی سربراہ نے کہا کہ تنخواہ نوازشریف نے ہی وصول کی اس کادستاویزی ثبوت نہیں،گواہ نے کہا کہ ایسا بینک ریکارڈ بھی نہیں تنخواہ نوازشریف نے وصول کی ،اس کے علاوہ کوئی ریکارڈ نہیں کہ نوازشریف کے توسط سے کسی نے تنخواہ وصول کی ۔
گواہ واجد ضیا نے کہا کہ ہمارے پاس کوئی شواہد نہیں کہ نوازشریف نے تنخواہ لی ہو،ان کا کہناتھا کہ تنخواہ کے سکرین شاٹ پر نوازشریف کا نام درج نہیں،ان کا کہناتھا کہ جافزا کی دستاویزات کاتعلق نوازشریف سے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں