ایبٹ آباد سے ملتان لاھور فیض وبرکات اور صحافتی مطالعاتی سرگرمیاں۔

تحریر ۔۔نوید اکرم عباسی: ایبٹ آباد
پاکستان کو اللہ پاک نے چاروں موسم سرسبز و شاداب وادیاں دریاوں سمندر کے ساحلوں کی وسعت کے ساتھ اولیاء کرام بزرگان دین کے فیوض وبرکات کے چشمے صحراوں میدانوں پہاڑوں میں بھی جاری و تا قیامت رکھے ہیں ۔پریس کلب ایبٹ آباد کے صحافیوں کا دورہ جنوبی پنجاب محبتوں کے سفیر طاہر نسیم اور انکے رفقاء کاروں کی بدولت خانیوال سے محبتیں سمیٹ اولیاء کرام کی سرزمین ملتان حاضری کے لیئے پہنچا جہاں سلامی دعا فاتحہ کے بعد مزار حضرت شاہ رکن عالم رح پر معروف مذھبی وسیاسی شخصیت شیخ محمد اشرف قریشی نے بزرگان دین کی مکمل تاریخ اور انکی دینی خدمات پر صحافیوں کو بریفنگ دی اسکے بعد اجتماعی دعا بزرگوں کے درجات کی بلندی کےلیئے کروائی گئی اسکے بعد یہ قافلہ دیگر مقامات کی سیر کے بعد موٹروے پولیس کا مہمان بنا اور ہیڈکوارٹر میں سیکٹر انچارج ایس پی ندیم اشرف اور انکی ٹیم نے استقبال کیا اور بریفنگ دی یوں صحافیوں کا یہ قافلہ خانیوال ملتان کے دوستوں طاہر نسیم رانا سلیم شاہد انجم ودیگر کی بھرپور میزبانی اور محبتوں کی خیرات سمیٹ کر براستہ موٹر وے عازم لاھور ہوا راستہ بھر میں جہاں ایک طرف پنجاب کی وسعتوں بھری لہلاتے کھیتوں اناجوں سے بھرپور زمینی نظارے تھے تو گاڑی کے اندر عاطف حسین اور ساتھیوں کے ہنسی مزاح سے بھر پور جملے شعروشاعری لطائف وقت گزرنے کا احساس نہیں ہونے دے رہئے تھے

۔رات یہ قافلہ حضرت داتا گنج بخش رح کی دھرتی پنجاب کے دل عارضی دنیا کے دل لاھور میں پریس کلب لاھور کے ٹیم کیپٹن ارشد انصاری اور پنجاب یونین آف جرنلسٹس کے عامر بھٹی اور انکے دوستوں کی میزبانی میں جاپہنچا رات کے کھانے پر لطف یوں دوبالا ہو گیا کہ میزبان لاھور پریس کلب مہمان ایبٹ آباد پریس کلب اور پاکستان کے خوبصورت خطے بلوچستان کے ضلع لسبیلہ حب پریس کلب کے دوست جو پاکستان کے چاروں صوبوں آذادکشمیر کے دورے پر آئے ہوئے ہیں سب ایک جگہ مل بھیٹے اور خوب گپ شپ رہی ۔ماضی کے مسلمان حکمرانوں اور سکھ دور حکومت رنجیت سنگھ کی نشانیاں لاھور کا دہلی گیٹ شاہی حمام شاہی قلعہ شیش محل ایسی تاریخی عمارات ورثہ فن تعمیر اور ماضی کی لازوال داستانوں پر محیط نہ صرف ملکی سیاحوں طلباء تحیققی کام کرنے والوں بلکہ غیر ملکی سیاحوں کو بھی کھینچ لاتا ہے

اسکی سیر اور معلومات کا خزانہ ھمیں منتقل کرنے کے لیے پنجاب یونین آف جرنلسٹس کے عامر بھٹی کی میزبانی میں وال سٹی پراجیکٹ کے مدثر احمد نے حق مہمان نوازی ادا کیا جس پر مجھ سمیت میرے دوستوں کی طرف سے شکریہ ۔لاھور میں پاکستان دعوت اسلامی کا مرکز فیضان مدینہ علم وروشنی کا گہوارہ ھے جہاں محبتوں کے ساتھ درس و تدریس جاری ھے ھمارے میزبان میڈیا کوآرڈینیٹر نارتھ ریجن مولانا عثمان اور مولانا وسیم تھے جنھوں پرتکلف ناشتہ کی نشت کے بعد مرکز کا دورہ کروایا جہاں مولانا یافعور رضا عطاری نے شرکاء کو بتایا کہ 30 سال سے محنت جاری ھے مکمل غیر سیاسی فرقہ واریت سے پاک جماعت ھے

پاکستان کے 450 شہروں میں مراکز قائم ہیں 250 لاکھ بچے تعلیم حاصل کررہئے ہیں دارلمدینہ اسلامک یونیورسٹی کی بنیاد پڑھ چکی ھے اسلامی شعائر اور مسلمانوں کی ترجمانی کےلیئے مدنی ٹی وی چینل سے بچوں کے لئے کارٹون اور خواتین کےلیئے پروگرام شروع کر رہئے ہیں تاکہ ھمارے بچے غیروں کی تہذیب و ثقافت سے نکل کر اسلامی کلچر سمجھ کر اپنائیں ۔مرکز میں احسان الحق عطاری جہاں قوت سماعت سے محروم سپیشل طلباء کو پڑھا رہئے تھے تو صدام حسین عطاری بزرگ افراد کو تجوید قرآن سیکھا رئے تھے مرکز میں خیبر پختون خواہ گلگت بلستان پنجاب سمیت دوردراز علاقوں سے آفیسرز طلباء بزرگ مختلف شعبوں میں موجود تھے آخر میں وفد نے مدنی سنٹر فیضان مدینہ میں پودا لگا کر شجر کاری مہم کا آغاز بھی کیا

۔لاھور میں جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی سکریٹری اطلاعات قیصر شریف کی میزبانی میں کھانے کی ٹیبل پر ملکی حالات واقعات پر مفصل گفتگو ہوئی جماعت اسلامی بلدیاتی الیکشن میں پنجاب سے بھرپور مقابلے کے لئے تیار ھے اور قیصر شریف کا کہنا تھا کہ میڈیا کے حوالے سے جب بھی کوئی بل اسمبلی میں آیا تو جماعت اسلامی نے بھرپور حمایت کی اور موجودہ دور میں بھی میڈیا پر پابندیوں کے سخت خلاف ہیں آزادی رائے ہونا چاہیے جہاں صحافت آزاد نہیں ہوتی وہاں معاشرہ زوال پذیر ہوتا ھے ۔ ہارون تنولی کی وساطت سے نیو نیوز کے ہیڈکوارٹر میں ایڈمن آفیسر وحید تنولی اور ویسم حسین نے استقبال کیا اور تمام شعبہ جات کا دورہ کروا کر جو عزت افزائی کی وہ یادگار رہی ۔ھمارا قافلہ پنجاب کی محبتیں سمیٹ کر داتا گنج بخش رح حاضری کے لیئے داتا دربار پہنچا مسجد میں نماز ادا کرکے دعا فاتحہ پڑھ کر اللہ پاک کے دوستوں کی قربت کا شرف اور فیض سمیٹ کر واپس ہزارہ کی سرزمین پر باخریت پہنچ گئے ۔اور جنوبی پنجاب سنڑل پنجاب کے سب وسیع القلب مہمان نواز دوستوں کے شکریہ کے ساتھ دعا گو ہیں ۔

Abbottabad-multan, Lahore journalists trip by Senior Journalist Naveed Akram Abbasi

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں