ایبٹ آباد کے ڈی ایچ او ۔ میڈیکل ڈائریکٹر AMC نے حکومت سے تمام سکولوں کو سردیوں کی جلد چھٹیاں دینے کی سفارش کر دی

محکمہ صحت ایبٹ آباد اور ایوب ہاسپٹل کمپلیکس انتظامیہ نے کرونا وائرس کے حوالے سے ہائی الرٹ جاری کرتے ہوئے ہوۓ وائرس کی دوسری لہر کو ہزارہ ڈویژن میں خطرناک ترین قرار دے دیا سکریننگ کے عمل کے بعد کرونا وائرس مثبت ہونے کی شرح ایبٹ آباد میں 12 فیصد ہو چکی ہے جو انتہائی تشویش ناک ہے ڈاکٹروں نے سکولوں کی فوری بندش کی صوبائی حکومت کوسفارشات بیجھ دی ایبٹ آباد میں 22 ہزار افراد کے ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے 22 سو افراد کے ٹیسٹ مثبت آئے ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ایبٹ آباد ڈاکٹر فیصل خان زادہ میڈیکل ڈائریکٹر ایوب ہاسپیٹل ڈاکٹر احسن اورنگزیب اور ایم ایس ڈی ایچ کیو ہسپتال ڈاکٹر عامر اسرار نے ایبٹ آباد پریس کلب میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا اس موقع پر پریس کانفرنس کے شرکاء نے مزید کہا کہ ابھی سردیوں کے ابتدا ہے اور وائرس سردی بڑھنے کے ساتھ ساتھ مزید پھیل رہا ہے اور وائرس اپنا پیٹرن بھی تبدیل کر رہا ہے کرونا کے مریض پہلے ہفتہ دس دن میں ریکور ہو جاتے تھے مگر اب دیکھنے میں آیا ہے کہ مریض 4پانچ دن میں ہی موت کا شکار ہو جاتا ہے یا پھر ایسے کیسز بھی ہیں جن میں مریض 25 دن جن سے ہسپتال میں پڑے ہیں مگر صحت یاب نہیں ہو رہے ہیں اور اب وائرس میں یورپ طرز کے شرح کی پھیلاٶ اور نقصان ہونا شروع ہو چکا ہے ایبٹ آباد میں ساڑھے چھہ ہزار اسکول طلبہ کا کرونا ٹیسٹ کیا گیا ہے جس میں 187 طلباء اور طالبات میں مثبت آۓ محکمہ صحت نے لیول فاٸیو کے لاک ڈاٶن اور سکولوں کو سردیوں کی چھٹیاں جلد دینے کی سفارش کی ہے عوام ہی اس واٸرس پر قابو پانے میں مدد کر سکتے ہیں اور اپنی جان اور دوسروں کی جان بچانے کیلٸے پر ہجوم جگہوں پر جانے سے اجتناب کریں سماجی فاصلہ رکھیں اور ماسک ضرور پہنیں اور ہسپتال کا غیر ضروری آنا جانا ختم کر دیں کیونکہ صرف ایوب ہسپتال کمپلیکس میں ہسپتال عملہ کے 33 افراد کرونا واٸرس کا شکار ہو چکے ہیں ایوب ہسپتال میں 66 مریض داخل ہیں اور 18 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے ماسک پہن کر اس واٸرس کے خطرے کو 95 فیصد کم کیا جا سکتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں