خیبر پختون خوا پولیس نے عوام کو مذید سہولیات کی فراہمی میں اصلاحات لارہی ہے

ایبٹ آباد(ہندکو ٹی وی)خیبر پختون خوا پولیس نے عوام کو مذید سہولیات کی فراہمی میں اصلاحات لارہی ہے جس کی سفارشات کو حتمی شکل دیکر جلد حکومت کو پیش کی جائے گی،ڈی آر سی اور پولیس سیفٹی کمیشن کو فعال کرنے کے لئے بھی عملی اقدامات اٹھائے جائیں گے ان خیالات کا اظہار انسپکٹر جنرل پولیس خیبر پختون خوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے پشاور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن ایبٹ آباد کے زیر اہتمام پولیس اصلاحات 2012اور 2017 کے حوالہ سے ڈسٹرکٹ بار روم میں خطاب کرتے ہوئے کیا سیمینار سے صدر ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن سردار عبد الرؤف ایڈووکیٹ ،جنرل سیکرٹری اسد چوہان ایڈووکیٹ ،عبداللہ خان ایڈووکیٹ ،جنید انور ایڈووکیٹ ،کرن ایوب تنولی ایڈووکیٹ ،سردار امان خان ایڈووکیٹ نے بھی خطاب کیا اس موقع پر ڈی آئی جی ہزارہ میر ویس نیاز ،ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ظہور بابرآفریدی، ڈسٹرکٹ بار کے صدر جہانگیر الہی ایڈووکیٹ ،مانسہرہ بار کے صدر عامر خان سواتی ایڈووکیٹ ،شعبہ تفتیش کے افسران اور ہزارہ بھر کے وکلاء بڑی تعداد میں موجود تھے انسپکٹر جنرل پولیس خیبر پختون خوا ڈاکٹر ثناء اللہ کا کہناتھا کے پی کی پولیس نے جزا اور سزا کانظام پوری طرح نافذ العمل ہے اعلی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والوں کی حوصلہ افزائی اور فرائض سے روگردانی کرنے والوں کو سرزنش کی جاتی ہے ،انہوں نے کہا کہ محکمہ کو جدید خطوط استوار کرنے کے لئے صوبائی حکومت کے تعاون سے عملی اقدامات کررہے ہیں اور صوبہ بھر میں تھانہ جات کی تعداد میں اضافہ کیا جارہا ہے تاکہ پولیس کو عوامی امنگوں اور ضرورت کے مطابق تیار کیا جاسکے،انہوں نے کہا کہ پولیس کو جدید ٹیکنالوجی کے مطابق تربیت دی جارہی ہے اور خصوصی طور پر شعبہ تفتیش کو ترجیح دی جارہی ہے،پولیس ٹریننگ سکولز کے زریعہ تفتیشی سٹاف کی تربیت کی جارہی ہے،انہوں نے کہا کہ 22اے کے تحت مقدمات درج کروانے کے لئے ہدایات جاری ہو چکی ہیں اور اس میں مذید بہتری کے لئے جوڈیشل کمیشن سے مشاورت کا عمل جاری ہے اگر پھر بھی کسی کی داد رسی نہ ہوسکے تو متعلقہ ڈی آئی جی اور آئی جی سے رابطہ کر سکتے ہیں،انہوں نے ڈی آر سی اور پولیس سیفٹی کمیشن کے حوالہ سے اٹھائے گئے اقدامات پر بتایا کہ ان دونوں اداروں کی کارکردگی لائق تحسین ہے اور ڈی آر سی کے متعلق عوام کا اعتماد میں مذید اضافہ ہوا ہے اور پبلک سیفٹی کمیشن کو بھی فعال کرنے کے کوششیں جاری ہیں،آئی جی نے کہا کہ ایف آئی آر کا اندراج کا ہر شہری کو حق حاصل ہے کسی بھی شکایت میں اعلی افسران سے رابطہ کر سکتے ہیں،بچوں کے قوانین کے حوالہ سے کہا کہ ان قوانین پر عمل درآمد بھی کیا جائے گا،انہوں نے وکلاء کو یقین دلایا کہ ان کی جانب سے پیش کردہ تجاویز پر عمل درآمد کی کوشش کی جائے گی اور آئندہ ایسے سیمینار ڈویژنل سطح پر کروائے جائیں گے،صدر ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن سردار عبدالرؤف کا کہناتھا کہ وہ عملی کام پر یقین رکھتے ہیں اور جو وعدے منتخب ہونے سے قبل کئے ان کو پورا کیا جارہا ہے اور ہزارہ بھر کے ڈسٹرکٹ بار اور تحصیل بار کے مسائل حل کرنے کی کوششیں جارہی ہیں اور یہ سیمینار بھی اس کی کڑی ہے اس کے بعد بہت جلد چیف سیکرٹری کے پی کے اور سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو کو بھی دعوت دی جائے گی ،سیمینار کے اختتام پر ہائی کورٹ بار کے صدر آئی جی کے پی کے اور مہمانوں کی روایتی دیسی کھانوں سے تواضع کی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں