ایبٹ آباد جیل میں قیدی کی قرآن کریم کے نسخہ کی بے حرمتی کرنے کے واقعہ پر شہر اور ہزارہ کے مختلف اضلاع میں عوام سڑکوں پر آگئے

ایبٹ آباد: ایبٹ آباد جیل میں قیدی کی قرآن کریم کے نسخہ کی بے حرمتی کرنے کے واقعہ پر شہر اور ہزارہ کے مختلف اضلاع میں عوام سڑکوں پر آگئے ایبٹ آباد شہر میں مشتعل افراد کا جیل کاگہراو،بازاروں میں شٹر ڈاؤن ،فوارہ چوک میں دھرنا ،قیدی کو نامعلوم مقام پر منتقل کرکے مظاہرین پر شیلنگ کی گئی،پولیس نے توہین کرنے والے شخص پر مقدمہ درج کردیا، علماء کرام ،سول سوسائٹی مذہبی تنظیموں کی 12رکنی مذاکراتی کمیٹی بھی قائم ہو گئی شہر کےمختلف مقامات پر مظاہروں سے ٹریفک کانظام بھی جام ہوگیا عوامی نمائندوں نے واقعہ کی مذمت کی،تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ایبٹ آباد جیل میں توہین کے مقدمہ میں قید نواں شہر کے رہائشی عمران نامی شخص نے قرآن کریم کی بے حرمتی کرتے ہوئے اسے شہید کیا اور نسخے کو گندے پانی میں بہانے پر جیل میں قیدیوں نے توہین قرآن کے مرتکب شخص کی درگت بنائی واقعہ کی اطلاع جیل سے بائر پھیلنے پر ہزاروں کی تعداد میں نوجوان مختلف طبقہ سے وابستہ افراد ،مذہبی شخصیات جیل کے باہر جمع ہوگئیں اور احتجاج شروع کیا پولیس نے امن امان پر قابو پانے کے لئے مظاہرین پر شیلنگ کی تاہم نوجوان مختلف ٹولیوں میں شہر اور بازار کے مختلف حصوں میں پھیل گئے اور بازاروں کو بھی شڑ ڈاؤن کیا،پولیس اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ایڈیشنل کمشنر آمین الحسن ،پولیس افسران ملک اعجاز ،اشتیاق خان ،طارق خان نے 12رکنی کمیٹی ڈسٹرکٹ خطیب مفتی عبدالواجد ،پیر سید کمال حسین شاہ ،حاجی ایاز خان ،مفتی جعفر طیار ،مولانا انیس الرحمن ،وقار خان ،حاجی ممتاز ،سردار شاہنواز ،سجاد خان اور دیگر کو نامزد ملزم کو قرار واقعی سزا دلانے کی یقین دہانی کرائی،مذاکراتی وفد نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے بھی ملاقات میں توہین کرنے والے کی نشاندہی کرنے والے افراد ،احتجاجی مظاہرین کے خلاف مقدمات کے اندراج نہ کرنے پر زور دیا جب تھانہ سٹی پولیس کے مطابق توہین قرآن کریم کے مرتکب شخص کے خلاف 295B کے تحت ایف آئی آر درج کی ہے ،ادھر انتظامی افسران نے مذاکراتی وفد کو یقین دلایا کہ من وعن مقدمہ درج کرکے قانون کے مطابق کاروائی کریں گے،ڈسٹرکٹ خطیب مفتی عبدالواجد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قرآن کریم کی عزت انتظامیہ کی زمہ داری ہے جس نے گستاخی کی اس کو ریاست کے قانون کے مطابق سزا دی جائے اس واقعہ سے مسلمانوں کے دل زخمی ہوئے کوئی سقم نہ رکھیں تاکہ عدالت سے بری نہ ہوسکے،دریں اثنا واقعہ کے بعد ایبٹ آباد فوارہ چوک ،منڈیاں ،ایوب میڈیکل کمپلیکس ،ہری پور اور حویلیاں میں بھی بڑی تعداد میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے جنہوں نے ملزم کو قانون کے مطابق آزاد دینے کا مطالبہ کیا واقعہ پر رکن قومی اسمبلی علی خان جدون نے مذمت کرتے ہوئے ملوث شخص کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی کرنے پر زور دیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں