ملک بھر میں نامور تعلیمی ادارہ ایبٹ آباد پبلک سکول کی زیر نگرانی مانسہرہ میں صوبے کے پہلے فاطمہ جناح پبلک سکول اینڈ کالج برائے طالبات مانسہرہ میں کلاسز کا آغاز

خیبر پختون خوا حکومت کا تعلیم کے لئے ایک اور انقلابی قدم ملک بھر میں نامور تعلیمی ادارہ ایبٹ آباد پبلک سکول کی زیر نگرانی مانسہرہ میں صوبے کے پہلے فاطمہ جناح پبلک سکول اینڈ کالج برائے طالبات مانسہرہ میں کلاسز کا آغاز نئے تعلیمی سال سے شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے،اس حوالہ سے ایبٹ آباد پبلک سکول اینڈ فاطمہ جناح پبلک سکول فار گرلز کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر سید وقار علی رضوی نے سینئر ہاؤس ماسٹر اے پی ایس ڈاکٹر سردار عنایت الرحمن،ہاوس ماسٹر اے پی ایس سہیل محمود،برسز فاطمہ جناح اینڈ اے پی ایس اسرار احمد پرنسپل سیکرٹری عثمان طاہر کے ہمراہ پریس بریفنگ میں بتایا کہ خیبر پختون خوا حکومت کے تعاون سے مانسہرہ میں طالبات کے لئے فاطمہ جناح پبلک سکول فار گرلز میں کلاسز کا آغاز کیا جارہا ہے جس کے لئے داخلے ایبٹ آباد پبلک سکول کے معیار کی طرح مارچ سے شروع کریں گے،پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر سید وقار علی رضوی کا کہناتھا ابتدائی مرحلہ میں تین کلاسز کا آغاز ساتویں،آٹھویں اور نہم شروع کی جائیں گی ایک کلاس میں تیس بچیوں کی گنجائش رکھی گئی ہے ہاسٹل کے لئے 60 طالبات کو رہائش ملے گی اور 30 بچیاں ڈے سکالرز پر ہونگی، اور ایٹا کے زریعے بھی سکالرشپ دی جائے گی،جب کہ اس سے قبل ہزارہ کی طالبات مردان یا دیگر کالجز میں داخلہ ملتا تھا،انہوں نے بتایا کہ فاطمہ جناح پبلک سکول اینڈ کالج برائے طالبات کی تعمیر 2011میں شروع کی گئی جس کی تکمیل 2016 میں مکمل ہوئی تھی،جولائی میں سیکرٹری ایجوکیشن خیبر پختون خوا نے اس بند سکول کو چلانے کی ہدایت کی اور اس وقت کے صوبائی وزیر تعلیم اکبر ایوب نے بھی اس کو چلانے کے حوصلہ افزائی کی اس چیلنج کو قبول کرکے ستمبر میں بورڈ آف گورنر کے اجلاس میں فیصلے کئے گئے اور بعد ازاں صوبائی وزیر تعلیم شہرام خان ترکہی نے سکول میں کلاسز فوری شروع کرنے پر زور دیا،انہوں نے بتایا کہ ادارہ میں خواتین اساتذہ کی بھرتی مانسہرہ سے کی جائے گی جو فروری کے اختتام تک مکمل کرلیں گے سکول میں بارہویں جماعت تک تعلیم فراہم کی جائے تاہم ابتدائی مرحلہ میں ساتویں آٹھویں اور نہم کی کلاسز شروع کی جائیں گی سکول میں طالبات کے سیکورٹی کے لئے سخت انتظامات کیے گئے ہیں ہاسٹل کے ایک کمرے میں پانچ طالبات کے لئے رہائش ہوگی،انہوں نے اس بات پر زور دیا آنے والے سال میں ہزارہ کا نامور اور معیاری درسگاہ بنائیں گے اور اس کا شمار ہزارہ کے بہترین اداروں میں ہوگا،اس معاملے میں مقامی ایم پی اے بابر سلیم سواتی کا تعاون حاصل ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں