کراچی کے ایک رکشہ ڈراٸیور امجد علی جو اپنی چھ بیٹیوں کو ‘اپنی طاقت کا ستون’ قرار دیتے ہیں ۔

کراچی کے ایک رکشہ ڈراٸیور امجد علی جو اپنی چھ بیٹیوں کو ‘اپنی طاقت کا ستون’ قرار دیتے ہیں ۔

ایک ایسے معاشرے میں جہاں کچھ جاہل لوگ بیٹی کو بوجھ سمجھتے ہیں وہاں ان محترم باپ کو اپنی بچیوں کو ٹاپ ریٹڈ یونیورسٹیز اور کالجز میں بھیجنے پہ ان پر طنز کیا گیا ان الفاظ میں کہ بیٹیاں شادی کے لیے ہوتی ہیں اور پراٸے دھن کی وجہ سے اپ کے پاس نہی رہتیں تو خون پسینے کی کماٸی ان پہ لگانے کا کیا فاٸدہ ۔
لیکن یہ عظیم والد ان سب جہلا کے لیے خود جواب ہیں ۔

انکی بڑی بیٹی مسکان IBA جو کے ایشیا کے بھی مشہور سکولز میں آتا ہے وہاں سکالرشپ حاصل کرچکی ہیں اور دوسری بیٹی ڈاٶ یونیورسٹی اف ہیلتھ ساٸنسز کی طالبہ ہیں ۔ایک اور بیٹی TCF کالج میں پڑھتی ہیں ۔
یہ شخص ایک انسپاٸریشن ہے اس معاشرے کے لیے

کبھی بھی بیٹی کو اپنی باقی اولاد خصوصاً اولاد نرینہ سے کم نا سمجھیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں