سیکرٹری صنعت وتجارت خیبر پختون خوا جاوید مروت نے سمال انڈسٹری فیز ٹو میں بنیادی سہولیات کی فراہمی ایک ماہ میں حل کرنے کا اعلان

ایبٹ آباد : سیکرٹری صنعت وتجارت خیبر پختون خوا جاوید مروت نے سمال انڈسٹری فیز ٹو میں بنیادی سہولیات کی فراہمی ایک ماہ میں حل کرنے کا اعلان کیا ہے،صوبائی حکومت انڈسٹری کو فروغ دینے کے لئے سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کر رہی ہے،حکومت نے ٹیکسز کی پالیسی پر نرمی کر کے مراعات دیں ہیں،اب وقت آچکا ہے نئی ٹیکنالوجی کو استعمال میں لائیں اور سی پیک کو چیلنج سمجھ کر اس سے استفادہ حاصل کریں تاکہ انیوالی نسل کو بہتر مستقبل دے سکیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں ایبٹ آباد میں سمال انڈسٹری فیز ٹو کے دورہ کے بعد انڈسٹریلسٹ کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کیا اجلاس میں چیف ایگزیکٹو آفیسر سرمایہ کاری وتجارتی بورڈ خیبر پختون خوا احسان داؤد ، مینجنگ ڈائریکٹر سمال انڈسٹری بورڈ غضنفر خٹک،حاجی افتحار خان رکن بورڈ آف ڈائریکٹرز سرمایہ کاری وتجارتی بورڈ خیبر پختون خوا ،فیڈریشن آف پاکستان چیمبر کے حنیف گوہر ،صدر چیمبر آف کامرس ایبٹ آباد خالد لطیف مانسہرہ سمال انڈسٹری کے صدر عبد المالک اور دیگر نے خطاب کیا ،جبکہ اس موقع پر ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر طارق اللہ ،اسسٹنٹ ایڈیشنل کمشنر عکاشہ کرن ،چیف ایگزیکٹو واسا نور قاسم کے علاوہ ہزارہ بھر کے انڈسٹری سے وابستہ سرمایہ کار شریک تھے،سیکرٹری صنعت وتجارت اور فنی تعلیم جاوید مروت کا کہنا تھا مسائل تو بہت ہیں،ان کے حل کی جانب اجتماعی کاوش کرتے ہیں،ان کو سامنے لائیں ،انہوں نے کہا کہ سی پیک سے تین سال میں کوئی ترقی ہوئی اس پر غور کرنے کی ضرورت ہے اگر مستفید نہیں ہو سکے تو اس کو چیلنج سمجھ کر سب نے اپنا حصہ ڈالنا ہے،15سال میں جس عفریت سے صوبہ کے عوام کو سامنا تھا اس عذاب سے اب نکل چکے ہیں اب امن ہے جو ترقی کی بنیادی شرط ہے اس کے لئے بہت بڑی قربانیاں دیں ہیں اب روشن دن دیکھ رہے ہیں،اجلاس میں مینجنگ ڈائریکٹر سمال انڈسٹری بورڈ غضنفر خٹک کا کہنا تھا ہزارہ میں ترقی کی گنجائش موجود ہے،گرینائٹ ہزارہ میں وافر مقدار میں موجود ہے اور بہت سے زخائر کی دریافت ہونا باقی ہے،ہزارہ کی ترقی کو اٹھانے کے لئے سمال انڈسٹری فیز ٹو کو اسپیشل اکنامک زون جلد قرار دیا جائے گا جس سے سرمایہ کاروں کو دس سال تک ٹیکس میں چھوٹ ہو گی اور مشینری کی خریداری میں بھی ڈیوٹی عائد نہیں ہوگی،مانسہرہ میں بھی جلد گرینائٹ انڈسٹری اسٹیٹ بنائیں گے،سمال انڈسٹری ایبٹ آباد میں نکاسی آب کے بے پناہ مسائل ہیں،یہاں سے گرینائٹ یونٹ فیز ٹو میں منتقل کر کے دوسری انڈسٹری لگانے کے مواقع مہیا کرینگے،چیف ایگزیکٹو سرمایہ کاری اور تجارتی بورڈ احسان داؤد بٹ کا کہنا تھا کاٹیج انڈسٹری کا معیشت میں 80فیصد حصہ ہے بجٹ میں سرمایہ کاروں کو حصوصی ریلیف دینے کے لئے ٹیکسز میں چھوٹ دی گئی ہے سرمایہ دار ماحول دوست نئی ٹیکنالوجی کو فروغ دیں،حکومت سرمایہ کاروں کو خیبر پختون میں واپس لائے گی،رکن بورڈ آف ڈائریکٹر سرمایہ کاری وتجارتی بورڈ خیبر پختون خوا حاجی افتحار خان نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومت سرمایہ کاروں کو مراعات نہیں سہولیات مہیا کرےصوبہ کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کی جدو جہد کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ سمال انڈسٹری فیز ٹو کو فوری فعال کرنے سے دس ہزار نئے روزگار کے مواقع مہیا ہونگے،بین الاقوامی ٹریڈ پر درآمدات کو ترجیح دینے کی ضرورت ہےسمال انڈسٹری فیز ٹو کو اسپیشل زون قرار دیکر اسٹیٹ بنک کی شاخ ،اور ایکسپو سنٹر کے قیام کی سہولت سے ہزارہ کی ترقی میں مدد ملے گی،سی پیک سے معیشت مضبوط کرنے کی ضرورت ہےگوادر بھی فعال ہو چکا ہے،قبل ازیں سیکرٹری صنعت وتجارت اور فنی تعلیم جاوید مروت کو مینجنگ ڈائریکٹر سمال انڈسٹری بورڈ غضنفر خٹک نے فیز ٹو میں دورہ کے موقع پر مکمل بریفنگ دی جس میں سیکرٹری جاوید مروت نے ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر طارق اللہ اور اسسٹنٹ کمشنر عکاشہ کرن کو بنیادی نوعیت کے معاملات فوری حل کرکے رپورٹ طلب کی،بریفنگ میں ایم ڈی ایس ڈی آئی پی آئی نے سمال انڈسٹری فیز ٹو کی کل 461کنال اراضی کو ایکوائر کرنے کے بعد کے مسائل سے آگاہ کیا،جس کی ترقی کے لئے 419ملین خرچ ہونگے،کل 166پلاٹ میں سے 30ماربل انڈسٹری کے لئے مختص ہیں۔اجلاس میں سیکرٹری صنعت وتجارت جاوید مروت سمیت دیگر مہمانوں کو یادگاری شیلڈ بھی پیش کی گیئں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں