عصرِ حاضر میں ملکی اورقومی ترقی کا انحصار تعلیمی اداروں کے قیام،قومی اور عالمی ضروریات سے ہم آہنگ نصاب کے انتخاب اور علم و ابلاغ جیسے لوازمات سے لیس اساتذہ پر ہے،

ایبٹ آباد: وائس چانسلرایبٹ آباد یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر طاہر عرفان خان نے کہا ہے کہ عصرِ حاضر میں ملکی اورقومی ترقی کا انحصار تعلیمی اداروں کے قیام،قومی اور عالمی ضروریات سے ہم آہنگ نصاب کے انتخاب اور علم و ابلاغ جیسے لوازمات سے لیس اساتذہ پر ہے، کیونکہ اعلیٰ تعلیم سے ہی ہم دنیا میں نہ صرف اپنے قومی تشخص کو اجاگر کر سکتے ہیں بلکہ عالمی سطح پر میدانِ علم میں اپنا حصہ ڈال کر باوقار، تہذیب یافتہ اور قابل احترام اقوام کی صف میں شامل ہو سکتے ہیں ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے دارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد کے دورہ کے موقع پر چیئرمین ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد محمد ساجد اعوان اور ادارہ میں زیر کفالت بچوں سے خصوصی ملاقات کے موقع پر کیا،انہوں نے ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد میں زیر کفالت اور ایبٹ آباد کے مختلف تعلیمی اداروں زیر تعلیم ان ہی فارغ التحصیل طلباء کو اعلی تعلیم کے حصول کیلئے سکالر شپ دینے کا اعلان کرتے ہوئے طلباء کی استعداد کار بڑھانے کے لئے خصوصی تکنیکی معاونت کی فراہمی کی بھی پیش کش کی ہے، گزشتہ روز ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آبادکے دورہ کے موقع پر،چائلڈ پروٹیکشن سپیشلسٹ ڈاکٹر ثمینہ کریم کے ہمراہ وائس چانسلرایبٹ آباد یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر طاہر عرفان خان نے ادارہ تدریس القرآن کے مختلف شعبوں ہاسٹلز،کلاسز، آئی ٹی لیب کا جائزہ لیا اور ادارہ کی جانب سے معیاری انتظامات،مضبوط مینجمنٹ اور ہر لحاظ سے مکمل آئی ٹی لیب کو یونیورسٹی لیول کے انتظامات کے برابر قرار دیا،اس موقع پر ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد کے چیئرمین محمد ساجد اعوان نے ان کو ادارہ کی کارکردگی پر بریفنگ دی اور درپیش مسائل،انتظامات اور بچوں کی تعلیم و ان کی تعلیمی قابلیت کے حوالے سے تفصیلا آگاہ کیا،وائس چانسلر ایبٹ آباد یونیورسٹی کے دورہ کے موقع پر ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد کے ایگزیکٹو ممبران انجینئر ملک سلطان خان،سعید اختر ایڈووکیٹ،سلیم سرحدی،سردار ذوق اختر، میجر ریٹائرڈ عابد حسین کے علاوہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن یونیورسٹی اجمل خان،وحیدہ رحمان ایچ او ڈی انگلش ڈیپارٹمنٹ اور دیگر بھی موجود تھے،وائس چانسلر ڈاکٹر طاہر عرفان خان کا میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد کے اطمینان بخش اور معیاری انتظامات دیکھ کر انہیں بے حد خوشی ہوئی ہے ،انہوں نے کہا کہ اس عظیم ادارے کو جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے لیے وہ ہر ممکن کوشش کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اوروہ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ طلبہ صرف تعلیم کے شوق اور جذبے سے ہی سچی حب الوطنی کا مظاہرہ کر سکتے ہیں اور تعلیم کے ساتھ ان کا گہرا رشتہ ہی انہیں اور اس وطن کو ایک قابلِ احترام مقام دلوائے گا،ان کا کہنا تھا کہ وہ ایک عرصہ سے یہ خواہش رکھتے تھے کہ اپنی مصروفیات میں وقت نکال کر یہاں کے بچوں کے ساتھ اپنا وقت گزاریں اور آج اللہ تعالیٰ نے ان کی یہ خواہش پوری کر دی ہے،انہوں نے ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد میں بچوں کیلئے رہائش،ان کی تعلیم وتربیت ،دینی و دنیاوی تربیت کے اعلی انتظام پر رشک کا اظہار کیا،ان کا کہنا تھا کہ بلاشبہ اس ادارے کی بدولت باپ کی شفقت سے محروم بچوں کو احساس کمتری سے نکال کر انہیں معاشرہ کے بہترین شہریوں کی طرح باوقار زندگی کا ایک تحفہ عطا کرنے کی اپنی روایات برقرار رکھی ہوئی ہیں جس کے وہ بذات خود بھی معترف ہیں ،قبل ازیں یو کے سے پاکستانی نژاد چائلڈ پروٹیکشن سپیشلسٹ ڈاکٹر ثمینہ کریم نے بھی ادارہ میں بچوں کو فراہم سہولیات میں گہری دلچسپی لیتے ہوئے اطمینان کا اظہار کیا اور بچوں کی ذہنی وجسمانی نشو نما میں ادارہ کی کارکردگی پر چیئرمین ادارہ تدریس القرآن یتیم خانہ ایبٹ آباد محمد ساجد اعوان اور ان کی پوری ٹیم کوخراج تحسین پیش کیا،واضح رہے کہ قیام پاکستان سے قبل قائم یہ ادارہ بغیر حکومتی سرپرستی کے فلاحی افراد کے تعاون سے چلایا جا رہا ہے جس سے فارغ التحصیل طلباء ملک کے اعلی عہدوں پرفائز اپنی خدمات سر انجام دے رہے ہیں ،گزشتہ چند برس میں ادارہ ہذا میں انقلابی اقدامات اور کئی اہم ترقیاتی منصوبوں کی بدولت خاصی پیش رفت حاصل ہوئی ہے جس سے یہ ادارہ مختلف فورم اور سطح پر اپنی عملی کارکردگی سے نمونہ ثابت ہو رہا ہے

VC Abbottabad University
Vice chancellor AUST

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں